تازہ ترین

سیکیورٹی فورسز عوام کے گھروں کو خالی کردیں ـ مہمند لویہ جرگہ

سیکیورٹی فورسز عوام کے گھروں کو خالی کردیں ـ مہمند لویہ جرگہ

غلنئ:(ٹرائبل نیوز) مہمند ایجنسی اور ملحقہ علاقوں میں آباد مہمند اقوام نے گزشتہ دنوں مہمند لویہ جرگہ کا انعقاد کیا تھا جس میں کثیر تعداد میں لوگوں نے شرکت کی اور مہمند اقوام کے مسائل کو بہترین انداز میں اجاگر کیا گیا ۔ جرگہ میں تمام ضلع مہمند اور پاکستان کے مختلف علاقوں سے مہمند اقوام نے بھر پور بھرپور شرکت کی جس میں جرگہ نے حکومت سے کئ اہم مطالبات کئے

مطالبات میں لاپتہ افراد کی بازیابی اور جنگ زدہ علاقوں میں عام عوام کے گھروں کو خالی کرنے کا مطالبہ قابل ذکر تھا جنہیں سیکیورٹی فورسز مورچے بنائے ہوئے ہیں ـ

لویہ جرگہ کی ترجیحات اور مطالبات میں درجہ ذیل نکات شامل تھے

1:گورسل بارڈر کھولنا اور ناواپاس بارڈر میں اپنا حق لینا جو کہ تاریخی اور جغرافیائی اعتبار سے ضلع مہمند کا حصہ آرھا ھے۔

2: ماربل تنازعات , پرانے دشمنیوں کا خاتمہ اور زمینی تنازعات کی حل کیلئے جرگے تشکیل دینا۔

3:خوگاخیل, دوڑخیل, نظرخیل اور ملاخیل کے شناختی کارڈ اور پاسپورٹ کا مسئلہ حل کرنا۔

4:مہمند ڈیم اور ورسک ڈیم سے اپنا رائلٹی لینا اور ان میں ضلع مہمند کے نوجوانوں کو ترجیحی بنیادوں پر بھرتی کرنا۔

5: مہمند کیڈٹ کالج میں مقامی کوٹہ پر ضلع مہمند کے ڈومیسائل ھولڈر طلباء کو داخلہ دینا۔

6: ھر تحصیل کی سطح پر طلباء وطالبات کیلئے ایک ایک ھائی سکول اور پلے گراؤنڈ بنانا۔

7:مامدگٹ میں ماربل سٹی بنانا۔

8: ملک بھر کے میڈیکل و انجینئرنگ کالجز میں مہمند طلباء کا کوٹہ ڈبل کرنا۔

9: ضلع میں انفراسٹرکچر کو بہتر بنانا اور تمام علاقوں کو مین روڈ سے منسلک کرنا اور بجلی پہنچانا۔

10: پینے کے صاف پانی کا مسئلہ ضلع بھر میں بالعموم جبکہ تحصیل حلیمزئی اور بیزئی میں ترجیحی بنیادوں پر حل کرنا۔

11: اپنا اور اپنے اھل خانہ کا ووٹ ضلع مہمند منتقل کرنا اور مردم شماری میں حصہ لینا۔ اس مقصد کیلئے جرگہ تشکیل دینا۔

11: ملٹری آپریشنز کے دوران مسمار گھروں اور دکانوں کا معقول معاوضہ دینا۔

12: تحصیل بیزئی سب ڈویژن کمپاؤنڈ کو آباد کرنا اور تمام متعلقہ محکموں کے دفاتر وھاں منتقل کرنا۔

13: تمام ضلع مہمند میں انٹرنیٹ اور 4G بحال کرنا اور جہاں نیٹ ورک نہ ھو وھاں نیٹ ورک بحال کرنا۔

14: جن علاقوں میں مقامی آبادی کے گھروں میں سیکیورٹی فورسز رھائش پذیر ھیں ۔ وھاں مالکان کو کرایہ دیا جائے اور ان گھروں کو خالی کیا جائے تاکہ غریب لوگ اپنے گھروں کو واپس لوٹ سکے۔

15: مہمند پولیس اور انتظامیہ کیطرف سے مالک جائیداد کی اجازت کے بغیر سکشن 4 نہ لگانا۔

16: 25 دیہات کے مسئلے کو حل کرنے کیلئے بھرپور کوششیں کرنا۔

17: سی پیک میں مہمند اکنامک زون کو ترجیحی بنیادوں پر بنانا اور سی پیک روڈ انفراسٹرکچر کیساتھ ملانا۔

18: تحصیل صافی اور بیزئی کے 600 خاصہ داروں کو بحال کرنا۔

19: ضلع مہمند میں NCP گاڑیوں کیلئے ملاکنڈ ڈویژن جیسا طریقہ کار اپنانا ۔

20: ضلع مہمند کے ھر تحصیل میں تفریحی پارک بنانا۔ گلما, ایلہ زے, جڑوبی درہ , شیخ بابا گلونہ , حاجی صاحب ترنگزئی مزار جیسے خوبصورت مقامات کو develop کرنا۔

21: ھر تحصیل کی سطح پر تحصیل ھیڈکوارٹر ھسپتال بنانا اور اسمیں تمام طبی عملہ و طبی آلات مہیا کرنا۔

22: جن علاقوں میں دو یا دو سے زائد لوگوں نے معدنیات لیز کیلئے اپلائی کی ھو یا آئندہ کر رھے ھوں۔ وھاں پر قومی جرگہ تشکیل کرکے پوری قوم کو اعتماد میں لیا جائے۔ تاکہ مختلف گروپس کے درمیان تصادم نہ ھو۔

24: ضلع مہمند سے ایشو ھونیوالے ڈومیسائلز اور شناختی کارڈ کی چھان بین کیجائے اور اسی قوم کے مشران کو اعتماد میں لیا جائے۔ تاکہ وہ تصدیق کرے کہ کوئی جعلی ڈومیسائل یا شناختی کارڈ تو ایشو نہیں ھوا۔

25: صوبائی حکومت نے ضلع مہمند کے ملکان کیساتھ جو وعدہ کیا تھا۔ اس وعدے کیمطابق انکے مرعات بحال کئے جائیں۔

26: ضلع مہمند سے تعلق رکھنے والے تمام Missing Persons کو عدالتوں میں پیش کئے جائیں اگر واقعی قصوروار ھوں تو عدالتوں کے ذریعے سزا دیجائے اگر قصوروار نہ ھوں تو انکو رھا کیا جائے۔

مبصرین کے مطابق مہمند ایجنسی دیگر تمام قبائلی اور جنگ زدہ علاقوں کے نسبت سب سے زیادہ بری حالت میں ہے اور مہمند عمائدین کے مطالبات سے واضح ہوتا ہے کہ وہاں بنیادی سہولتوں کا کتنا فقدان ہے ـ

ایڈمن کے بارے میں admin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے