تازہ ترین

کالعدم ٹی ٹی پی نے پچھلے ماہ کے حملوں تفصیلات جاری کردیں

کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے اپنی ویب سائٹ پر جولائی کے مہینے میں ملکی سیکیورٹی اداروں کے خلاف ہونے والے حملوں کی تفصیلات جاری کردی ہیں ـ

تفصیلات کے مطابق کالعدم ٹی ٹی پی نے جولائی کے مہینے میں قبائلی و بندوبستی علاقوں میں مختلف نوعیتوں کے کُل 26 حملے کئے ہیں ـ

سب سے زیادہ (13) حملے جنوبی وزیرستان میں کئے گئے ـ باجوڑ ایجنسی میں 5، شمالی وزیرستان میں 3، ضلع دیر میں 2 اور مردان، پشاور اور کرم ایجنسی میں ایک ایک حملے ہوئے ـ

ان حملوں میں سر فہرست (7) حملے بم دھماکوں کی صورت میں ہوئے، اس کے علاوہ ہجومی، ٹارگٹڈ اور گھات لگاکر بھی سیکیورٹی فورسز کو نشانہ بنایا گیا ـ

جاری کی گئی تفصیل میں دعوا کیا گیا ہے کہ ان حملوں میں 69 فوجی، 18 ایف سی اہلکار اور 4 پولیس اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے ہیں جن کی کل تعداد 91 بنتی ہے جن میں 56 ہلاکتیں اور 35 زخمی ہیں ـ

دعوے کے مطابق پاک فوج اور پولیس کی چار گاڑیاں تباہ ہوئی ہیں جبکہ 10 عدد مختلف قسم کا اسلحہ بھی شدت پسندوں کے ہاتھ لگا ہے ـ

رواں سال کے پچھلے چھ مہینوں میں تحریک طالبان پاکستان نے جنوری میں 17، فروری میں 16، مارچ میں 29، اپریل میں 16، مئی میں21 اور جون میں 16 حملے کرنے کا دعوا ہے ـ یوں 2021ء میں تمام حملوں کی تعداد 141 بنتی ہے ـ

واضح رہے کہ پچھلے سال اگست کے مہینے میں تحریک طالبان کے ساتھ تقریبا آٹھ چھوٹے بڑے گروپس نے اتحاد کیا جس کے بعد ان کے حملوں میں نمایاں اضافہ دیکھنے کو ملا ہے ـ

ایڈمن کے بارے میں admin

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے